وزیراعظم نے زیادتی کرنے والے مجرمان کو نامرد بنانے کا قانون بنانے کی اجازت دے دی

0
573 views
نامرد
Spread the love
 ملک میں بدکاری، عصمت دری کے واقعات ، زیادتی اور بچوں کے ساتھ بدسلوکی کے بڑھتے ہوئے جرائم کو روکنے کے لئے وزیر اعظم عمران خان نے ملزمان کے لئے نامرد بنانے یعنی کاسٹریشن کے قانون کی حتمی منظوری دی ہے۔
وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں ہونے والے ایک وفاقی کابینہ کے اجلاس میں ملک کے اندر بڑھتے ہوئے زیادتی کے واقعات کی روک تھام کرنے کیلئے قانون سازی پر بحث ہوئ۔ جس کے بعد، اجلاس میں ایسے تمام مجرمان کو سخت سزائیں دینے کی سفارشات کی منظوری دی گئی اورزیادتی کے مجرمان کیلئے نامرد بنانے کا قانون نافظ کرنے کی بھی منظوری دی گئی ہے۔

نامرد

وزیراعظم عمران خان نے اس اجلاس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک سنگین معاملہ ہے، اور ہم اس قانون سازی میں کوئ تاخیر نہیں کریں گے، عوام کے تحفظ کی خاطر شفاف اور واضح قانون سازی ہوگی، اور یہ ممکن بنایا جائے گا کہ ان جرائم کیلیے سخت سے سخت قانون پر عمل درامد کیا جائے۔
اسی اجلاس میں موجود کچھ وزراء نے یہ مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ زیادتی کے تمام مجرمان کو سرعام پھانسی کی سزا کو قانون کا حصہ بنایا جائے۔ جبکہ اس موقع پر عمران خان نے یہ رائے بھی دی ہے کہ ھمیں ابتدائی طور پر کیسٹریشن کے قانون کو نافظ کر نےکی طرف کام کرنا ہوگا۔

نامرد

اسی موقع پر وزیراعظم پاکستان عمران خان کایہ بھی کہنا تھا کہ ایک قانونی ٹیم نے ریپ قانون آرڈیننس کے مسودہ پر کام اپنا مکمل کرلیا ہے، جس میں خواتین پولیسنگ، فاسٹ ٹریک مقدمات، گواہوں کا تحفظ بنیادی اس قانون کا اہم حصہ ہوگا، اس طرح متاثرہ خواتین یا بچے بلاخوف وخطر اپنی شکایات بھی درج کراسکیں گے، متاثرہ خواتین و بچوں کی شناخت کے تحفظ کا بھی خاص خیال رکھا جائے گا۔ انہوں نے زور دیتے ہوۓ کہا کہ اب ہمیں اپنے شہریوں کے لئے محفوظ ترین ماحول کو یقینی بنانے کی اشد ضرورت ہے۔

بچوں اور خواتین سے زیادتی کرنے والے وحشیوں کے خلاف سخت سزاؤں، فاسٹ ٹریک مقدمات، اسپیشل پولیسنگ، گواہوں اور متاثرین کے تحفظ، ریپسٹ کاالگ ڈیٹا بینک، فوری اور تیز رفتار تفتیش اور دیگر نکات پر مشتمل مسودہ تیار کر لیا ہے جوجلد ہی پارلیمنٹ سے منظور ہو کرنافظ ہو جائے گا ۔ بچوں اور خواتین کے ساتھ عصمت دری کے جرائم کو روکنے کی خاطر وفاقی کابینہ نے مجرموں کوانتہائ سخت سزائیں دینے کی منظوری دےدی ہے اوراب حکومت جلد ہی اس قانون پر عمل درآمد بھی کرے گی ۔اس بارے میں (پی ٹی آئی) پاکستان تحریک انصاف کے مشہور سینیٹر فیصل جاوید خان نے اپنے ٹوئٹ ہینڈل پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ قانون جلد ہی پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔

مزید پڑہیے: حکومت کا زیادتی کے مجرموں کی نامرد بنانے کا قانون لانے کا فیصلہ۔۔ وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد وزارت قانون نے مسودے پر کام شروع کردیا


انہوں نے مزید یہ بھی کہا کہ خواتین اور بچوں کے ساتھ زیادتی کرنے والے وحشیوں کے خلاف سخت ترین سزاؤں، فاسٹ ٹریک مقدمات، اسپیشل پولیسنگ، گواہوں اور وکٹمز کو تحفظ، ریپسٹ کا ڈیٹا بینک، فوری اور تیز رفتار تفتیش اور دیگر نکات پر مشتمل مسودہ تیار کر لیا گیا ہے جسکو پارلیمنٹ سے منظوری کے بعد اس پر جلد ہی عمل درآمد کیا جائے گا۔
قصور کی ننھیوکٹم زینب اور اسی سال لاہور میں پیش آنے والے موٹر وے کے واقعےنے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا تھا اور اسکی وجہ سے اب تک ہر خاتون خود کو غیر محفوظ تصور کرتی ہے اور اسی واقعےکی وجہ سےتقریبا ہر فورم پرہی لوگوں نے خواتین کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے آواز اٹھائ اور اس طرح ملک میں عصمت دری کے واقعات کو روکنے کے لئے قوانین کے اطلاق کے لئے بحث کو چھیڑ دیا۔ قانون سازوں نے اس حرالے سے بچوں کے ساتھ زیادتی اور خواتین کے جنسی استحصال اور قاتلوں کوسرعام پھانسی دینے کے قانون سازی پر کوئی پیش رفت نہیں ہوپائی۔ تاہم زیادتی کے مجرمان کیلئے کیسٹریشن کے قانون کا نفاذ حکومت کا ایک انتہائ اہم اقدام ہے۔

یہ پوسٹ آپ کو کیسی لگی؟ نیچے کمنٹ لازمی کریں اور اپنی رائے دیں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here